0

کیا پاکستان اسرائیل کو تسلیم کرنے کا ارادہ رکھتا ہے سوشل میڈیا پر جاری بحث پر دفتر خارجہ نے بڑا رد عمل دے دیا

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) ترجمان دفتر خارجہ نے واضح کیا ہے کہ پاکستان میں اسرائیل کو تسلیم کرنے کے حوالے سے کوئی تجویز زیر غور نہیں ہے۔پاکستان میں اسرائیل کے حوالے سے بحث اس وقت شروع ہوئی جب امریکی اور اسرائیلی میڈیا نے دعویٰ کیا کہ اتوار کے روز اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نتن یاہو نے سعودی شہر نیوم کا خفیہ دورہ کیا اور امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کی موجودگی میں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے ساتھ ملاقات کی۔ اس مبینہ ملاقات کی خبریں سامنے آنے کے بعد پاکستان میں بحث چھڑ گئی کہ اگر سعودی عرب اسرائیل کو تسلیم کرنے کو تیار ہے تو پاکستان بھی اپنی خارجہ پالیسی پر نظر ثانی کرے۔

سوشل اور مین سٹریم میڈیا پر جاری بحث کے دوران ترجمان دفتر خارجہ نے اسرائیل کے حوالے سے ریاستی پالیسی واضح کی ہے۔ انہوں نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ اسرائیل کو تسلیم کرنے کی کوئی بھی تجویز زیر غور نہیں ہے، اس تناظر میں وزیر اعظم عمران خان کا بیان واضح ہے، مسئلہ فلسطین کے حل تک اسرائیل کو تسلیم نہیں کرسکتے۔ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان مسئلہ فلسطین کے حق خود ارادیت کی حمایت کرتا ہے، یہ مسئلہ اقوام متحدہ اور او آئی سی کی قراردادوں کے تناظر میں حل ہونا چاہیے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں