0

اعلان جنگ کیا جا چکا۔۔۔ میدان جنگ سے پیچھے ہٹنا گناہ کبیرہ ہے‘‘ حکومت کو کیسے باہر نکالا جائے گا ؟مولانا فضل الرحمان نے حکومت پر بجلیاں گرا دیں

پشاور(ویب ڈیسک)پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ کے سربراہ اور جے یو آئی (ف) کے امیر مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ حکمرانوں کیخلاف اعلان جنگ کرچکے ہیں،میدان جنگ سے واپس جانا گناہ کبیرہ ہے،ہمیں دھاندلی کر نے والا بھی معلوم ہے اور جو نامعلوم ہے وہ ہم سب کومعلوم ہے،ادارے پشت بانی سے پیچھے ہٹ جائیں اور دستبر دار ہو جائیں، آپ حکومت کیخلاف ہمارے ساتھ آواز ملائیں پھر ہم اور آپ بھائی بھائی ہیں، اگر ادارہ سیاسی بننے کی کوشش کریگا تو پھر تنقید بر داشت کرنا ہوگی اورنام بھی لیا جائیگا،آپ کے سامنے کلمہ حق بھی کہاجائیگا، حکمرانوں کی خارجہ پالیسی ناکام ہو چکی ہے، کوئی آپ کے ساتھ نہیں ہے،سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات اپنے پیسے واپس مانگ رہے ہیں،یہ محترم لوگوں کا ملک ہے،محترم قوم پر رسوا حکمران کو مسلط نہیں کیا جاسکتا،سی پارٹیوں کے قائدین ایک صف ہو کر انشاء اللہ اس منزل کو حاصل کر ینگے۔ اتوار کو یہاں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمن نے کہاکہ پی ڈی ایم کے تاریخی اور فقید المثال کانفرنس کے انعقاد پر پی ڈی ایم میں شامل تمام سیاسی جماعتوں کے قائدین اور ان کے کارکنوں کو دل کی گہرائیوں سے مبارکباد پیش کرتا ہوں اورا س کی کامیابی کیلئے جو آپ نے توانائیاں صرف کی ہیں پر خلوص جدوجہد اور محنت کی ہے اس کیلئے تہہ دل سے شکریہ ادا کرتا ہوں۔ انہوں نے کہاکہ مجھے افسوس کے ساتھ یہ بات کہنی پڑ رہی ہے کہ محترمہ نوازشریف اپنی دادی کے انتقال کی وجہ سے گفتگو نہیں کرسکیں،میں میاں نوازشریف، میاں شہباز شریف، مریم نواز شریف اور ان کے پورے خاندان سے ان کی والدہ کی وفات پر اظہار تعزیت کرتا ہوں اللہ رب العزت ان کی مغفرت فرمائے اور ان کے درجات کو بلند فرمائے۔انہوں نے کہاکہ اس موقع پر جہاں میں جسٹس سیٹھ وقار کی وفات پر اظہار تعزیت کرتا ہوں وہاں علامہ خادم حسین رضوی کی وفات پر اظہار تعزیت کرتا ہوں ان کے خاندان سے بھی تعزیت کرتا ہوں۔انہوں نے کہاکہ ایسے حالات میں ہم پشاور میں جلسہ عام منعقد کررہے ہیں جب اس سے پہلے ہم نے گوجرانوالہ میں اجتماعات کا آغاز کیا، کراچی اور کوئٹہ میں جلسہ کیا اور اب اہل پشاور نے ریفرنڈم ہی کر دیا، آپ نے دھاندلی کے نتیجے میں آنے والی حکومت کو مسترد کر دیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے پہلے ہی یہ اعلان کر دیا تھا کہ الیکشن میں بد ترین دھاندلی کی گئی ہے،تمام سیاسی جماعتوں نے اس پر اتفاق کیا تھا اور آج وہ آواز عام آدمی کی آواز بنتی چلی گئی اور یہ آواز پوری قوم کی آواز ہے اور آپ کے جلسوں سے حکمران جماعت اور ان کے پشتی بان بوکھلائے ہوئے ہیں، ہم نے آگے بڑھنا ہے اور ان کے اقتدار کے قلع کو فتح کر نا ہے، ان کو یہاں سے ذلت و رسوائی کے ساتھ نکالنا ہے، جنگ کااعلان کر چکے ہیں، اب میدان جنگ ہے اور میدان جنگ سے پیچھے ہٹنا گناہ کبیرہ ہے۔انہوں نے کہاکہ ہم نے چیلنج کر دیا ہے اور واضح طورپر کہنا چاہتے ہیں،ہمارا موقف بڑا واضح ہے،دھاندلی ہوئی ہے، دھاندلی کی گئی ہے اور ہمیں دھاندلی کر نے والا بھی معلوم ہے اور وہ جو نامعلوم ہے وہ ہم سب کومعلوم ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں