0

جسٹس قاضی فائزعیسیٰ فیصلے میں حکومت کا مئوقف بھی آ گیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم کا کہنا ہے کہ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کیس کے فیصلے میں ہماری تمام باتیں تسلیم کر لی گئی ہیں تو ہم نظرثانی کیوں فائل کریں گے۔ایک نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر قانون کا کہنا تھا کہ یہ وقت بتائے گا ان کے پاس منی ٹریل ہے یا نہیں، یہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) بتائے گا یا پھر سپریم جوڈیشل کونسل، ایف بی آر کے پاس بھیجنے کا مقصد ہی یہ تھا کہ وہ جواب دیں۔

فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کوئی بھی چیز کسی کے خلاف ہو تو کہتے ہیں یہ فوج اور آئی ایس ائی کر رہی ہے، لندن کی پراپرٹی کا ہونا جھوٹ یا ہوا میں نہیں ہے وہ سب سچ ہے۔ ہمارا کوئی مقصد نہیں تھا کہ قاضی فائز عیسی کے خلاف کچھ کریں۔ ریفرنس لا سیکرٹری نے ڈرافٹ کیا تھا جس پر میرے سائن ہیں۔ ججمنٹ میں کوئی بھی بات ہمارے یا صدر کے خلاف نہیں ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں